حسین شوگر ملز لمیٹڈ میں خوش آمدید

حسین شوگرملز لمیٹڈ، جو 1966 میں وجود میں آئی تھی، کراچی میں پاکستان کی سب سے قدیم اور مشہور چینی فیکٹریوں میں سے ایک ہے۔ پچاس سال سے زیادہ کا کاروبار مکمل کرنے کے بعد، کمپنی پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں سیکیورٹی کی علامت HSM کے ساتھ درج ہے۔ اس کمپنی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہ دو مرتبہ پاکستان کی ٹاپ 25 کمپنیوں کے ایوارڈ سے نوازی گئی ہے۔ اس ویب سائٹ پرآپ کمپنی کے حوالے سے تازہ ترین خبریں اور اپ ڈیٹ دیکھ سکتے ہیں۔

ہماری مصنوعات

بگاس

بگاس، جو گنے کی ریشہ کی باقیات ہے۔گنے کو بیلنے کے بعد جو چھلکا باقی رہ جاتا ہےاُس کو بگاس کہتے ہیں۔یہ توانائی حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔

مزید پڑھیں

نامیاتی کھاد

حسین شوگر ملز نے اعلی معیار کی نامیاتی کھاد تیار کی ہے جسے کاشتکار فصلوں کی کاشت سے قبل مٹی کو زرخیز بنانے کیلئے استعمال کرسکتے ہیں۔

مزید پڑھیں

راب

خام چینی کی تیاری کے دوران باقی رہ جانے والا مائع راب یا شیرہ کہلاتا ہے۔ چینی کی یہ ذیلی مصنوعات زیادہ تر کشید کنندہ کو فروخت کی جاتی ہیں۔

مزید پڑھیں

مصفی چینی

کمپنی کی زیادہ تر فروخت چینی پرمشتمل ہے۔ چینی ایک عام نام ہے جو مختلف میٹھا چکھنے والے افراد کے اہل خانہ کو دیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں

کمپنی پروفائل

حسین شوگر ملز لمیٹڈ (کمپنی) 14 فروری 1966 کو کراچی میں وجود میں آئی اور اسے 16 اپریل 1966 میں اپنا کاروبار شروع کرنے کا سرٹیفکیٹ ملا تھا۔ یہ کمپنی اب پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں درج ہےاس کمپنی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہ دو مرتبہ پاکستان کی ٹاپ 25 کمپنیوں کے ایوارڈ سے نوازی گئی ہے۔ کمپنی نے اپنی آزمائشی پیداوار 22 جنوری 1968 کو شروع کی اور 15 فروری 1968 کو تجارتی پیداوار شروع کی ، جس سے یہ پاکستان کی شوگر صنعتوں کی علمبردار بن گئی۔ کمپنی کی بھرپور تاریخ کے پیش نظر ، جو اب اپنی تیسری نسل میں ہے ، اسے علاقے کے گنے کاشتکاروں کے ساتھ خوشگوار اور خاندانی تعلقات حاصل ہیں۔

0

عمل کے سال

0

ملازمین کی تعداد۔

0

شیئر مارکیٹ کی قیمت

0

فی کس حصص آمدن

بورڈ آف ڈائریکٹرز

میاں احمد علی طارق
میاں احمد علی طارق
چیئرمین
میاں احمد علی طارق کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین ہیں۔ انہوں نے لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز سے اپنی اعلیٰ تعلیم مکمل اور بیچلر آف سائنس (آنر) ڈگری حاصل کی۔ میاں طارق انسٹی ٹیوٹ آف کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنٹس پاکستان (ICMAP) سے سرٹیفائیڈڈائریکٹر بھی ہیں۔
جناب مصطفی علی طارق
جناب مصطفی علی طارق
چیف ایگزیکٹو آفیسر
جناب مصطفی علی طارق کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں۔ انہوں نے اپنی اعلیٰ تعلیم یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، لاس اینجلس سے مکمل کی اور معاشیات میں بیچلر آف آرٹس کی ڈگری حاصل کی۔ وہ بورڈ کی کارکردگی کو بڑھانے پر اپنے کورس کی کامیاب تکمیل کے لئے لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز سے بھی سرٹیفائیڈ ہیں۔
محترمہ نصرت شمیم
محترمہ نصرت شمیم
نان ایگزیکٹو ڈائریکٹر
محترمہ نصرت شمیم ایک عشرہ سے زیادہ عرصہ سے حسین شوگر ملز کی چیف ایگزیکٹو اور چیئرپرسن تھیں۔ حسین شوگر میں ان کے وقت میں، انہوں نے کمپنی کے بنیادی سسٹمز لانے کے پراسیس اور 21 ویں صدی کے حالیہ عوامل کے ساتھ پراسیجر کو اپ ڈیٹ کرنے کی قیادت کی۔
محترمہ مریم حبیب
محترمہ مریم حبیب
ایگزیکٹو ڈائریکٹر
محترمہ مریم حبیب مارچ 2017 میں حسین شوگر ملز کے بورڈ پر ڈائریکٹر کے طور پر منتخب ہوئیں۔ محترمہ مریم حبیب نے اپنی اعلی تعلیم کنیئرڈ کالج لاہور سے مکمل کی۔ وہ اس وقت کمپنی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے رہی ہیں۔ کمپنی میں اپنے مختصر وقت میں،
جناب محمد افتخار
جناب محمد افتخار
نان ایگزیکٹو ڈائریکٹر
جناب محمد افتخار پاکستان کی شوگر انڈسٹری میں بہت ہی اعلیٰ ماہر اور تکنیکی قابل آپریٹرز میں سے ایک ہیں۔ جناب افتخار نے فروری 2016 میں نان ایگزیکٹو ڈائریکٹر کے طور پر کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں شمولیت اختیار کی۔ وہ شوگر انڈسٹری میں 25 سالوں سے زیادہ عرصہ سے مصروف اور انڈسٹریل آلات کے ڈیزائن اور مینوفیکچرنگ میں خصوصی ہیں۔
جناب محمد عمران خان
جناب محمد عمران خان
نان ایگزیکٹو ڈائریکٹر
جناب محمد عمران خان نے 31 مئی 2018 کو بورڈ میں شمولیت اختیار کی۔ اس وقت وہ حسین شوگر کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے نان ایگزیکٹو ڈائریکٹر اور بورڈ کی آڈٹ کمیٹی کے رکن ہیں۔ کمپنی میں جناب خان کی شراکت انتہائی اہمیت رکھتی ہے۔جناب خان Sule انٹرنیشنل کے سی ای او/ بانی کے طور پر کام کیا اور مقامی اور بین الاقوامی اشیاء کی...
جناب توفیق احمد خان
جناب توفیق احمد خان
آزاد ڈائریکٹر
جناب توفیق احمد خان پاکستان کی فارما سیوٹیکل صنعت کے اعلیٰ ڈیکوریٹڈ ایگزیکٹو ہیں۔ حسین شوگر کے بورڈ آف ڈائریکٹرز پر بطورآزاد ڈائریکٹر اور بورڈ کی آڈٹ کمیٹی کے چیئرمین کی حیثیت سے کام کررہے ہیں۔ کمپنی کے لئے جناب خان کی شراکت بہت اہمیت کی حامل ہے۔